Our Blog

حلال رزق

 

انسان کے اِس دنیا میں آنے سے پہلے ہی اُس کے ساتھ ضرورتوں کا ایک سلسلہ منسلک ہوجاتا ہےجو اپنے اپنے وقت پر پوری ہورہی ہوتی ہیں۔ جب انسان اِس دنیا میں آنکھ کھولتا ہے تو اُس کی ضروریات بڑھ جاتی ہیں لیکن اُن ضروریات کی تکمیل کا نظام بھی حرکت میں آجاتا ہے۔ البتہ انسان کے چونکہ اِس دنیا میں بلاوجہ نہیں بھیجا گیا بلکہ اِس کی تخلیق اور پیدائش کے پیچھے ایک بہت عظیم مقصد ہے جسے قرآن مجید میں یوں بیان کیا گیا ہے:

وماخلقت الجن والانس الا لیعبدون (سورۃ الذٰریٰت)                     ترجمہ:  میں نے انسان اور جنات کو نہیں پیدا کیا مگر اپنی عبادت کے لئے۔

عبادت کا مطلب ہے بندگی یعنی اللہ کی بندگی کرنا ۔ اللہ کی بندگی کرنے کا مطلب ہے ، اللہ کے لئے نماز پرھنا ، اللہ کے لئے روزہ رکھنا ، اللہ کے لئے حج کرنا ۔ عبادت اور بندگی کا ایک اور مطلب بھی ہے کہ اپنی صبح و شام کی زندگی اللہ کے احکام کے مطابق گزارنا۔ یہ بھی اللہ کی عبادت اور بندگی ہے ۔ یہی انسان کی زندگی کا مقصد ہے کہ اللہ کی اطاعت کے مطابق زندگی گزاری جائے ۔ انسان کے نیک اعمال کرنے میں ایک بہت بڑا محرک رزقِ حلال ہے ۔رزقِ حلال کی برکت سے انسان کو نیک اعمال کی توفیق ہوتی ہے اور عبادات میں دل بھی لگتا ہے ۔ اِسی لئے اللہ تعالی نے قران مجید میں ارشاد فرمایا :

یاایھا الرسل کلوا من الطیبٰت و اعملوا صالحا (سورۃ المؤمنون)                 ترجمہ: اے رسولو ! پاکیزہ (حلال) اشیاء کھاؤ او ر نیک اعمال کرو۔

حلال غذا کی برکات کے بہت سے واقعات تاریخ کی کتابوں میں درج ہیں ۔ مثلا :

ایک دفعہ امام احمد بن حنبل رحمۃ اللہ علیہ اپنے استاد امام شافعی رحمۃ اللہ علیہ سے ملاقات کے لئے گئے۔ رات کو کھانے کے دسترخوان پر کھانا چنا گیاتو امام احمد بن حنبل رحمۃ اللہ علیہ نے خوب سیر ہوکر کھایا ۔پھر امام احمد بن حنبل رحمۃ اللہ علیہ کو رات آرام کے لئے کمرے میں لیجایا گیا ۔ امام شافعی رحمۃ اللہ علیہ صبح فجر کی نماز کی ادائیگی کے بعد اُن کے ساتھ گھر واپس تشریف لے آئے اور انہیں کمرے میں بٹھایا ۔ تھوڑی دیر کے بعد امام شافعی رحمۃ اللہ علیہ اپنے مہمان کے پاس آئے اور کہا کہ میری بیٹیوں نے دو باتیں آپ کے بارے میں پوچھی ہیں ۔ میں چاہتا ہوں کہ اُن سوالوں کے جواب آپ دیں۔ میری بیٹیوں کا پہلا سوال یہ تھا کہ آپ نے رات کو کھانا معمول سے بہت زیادہ کھایا ہے حالانکہ اتنا کوئی نہیں کھاتا ؟ اس کی وجہ کیا ہے ؟

دوسرا سوال یہ ہے کہ آپ کے کمرے میں وضو کے لئے پانی کا لوٹا رکھا ہوا تھا ، کیا آپ نے تہجد کی نماز نہیں ادا کی؟

امام احمد بن حنبل رحمۃ اللہ علیہ نے جواب دیا : میں نے کھانا اِس لئے زیادہ کھایا ہے کہ اِس کھانے میں حلال ہونے کی وجہ سے بہت برکات تھیں تو میں نے سوچا کہ پیٹ کے راستے جتنی برکت میرے جسم میں چلی جائے ، اچھا ہے۔ دوسرا جواب یہ ہے کہ میں نے رات کو تہجد کی نماز ادا کی تھی لیکن میں نے وضو نہیں کیا کیونکہ اس کھانے کی برکت سے میری ساری تھکاوٹ دور ہوچکی تھی، لہذا مجھےسونے کی ضرورت نہیں تھی اور نہ ہی میرا وضو ٹوٹا بلکہ میں نے ساری رات قرآن مجید کی ایک آیت میں غور کرتے ہوئے گزاری اور اُس آیت سے میں نے ایک سو مسائل اخذ کیے۔

اِسی طرح حلال غذا سے انسان میں بہادری اور شجاعت بھی پیدا ہوتی ہے۔ انسان میں ہمت اور حوصلہ پیدا ہوتا ہے جبکہ حرام اشیاء سے بزدلی پیدا ہوتی ہے۔ تاریخ میں بہت سے ایسے واقعات مذکور ہیں مثلا: ایک دفعہ افغانستان کے حکمران امیر عبد الرحمن نے اپنے بیٹے کو ولی عہد بنایا اور اُسے ایک جنگی مہم پر بھیجا۔ اچانک وہاں سے اطلاع آئی کہ بادشاہ کا بیٹا میدانِ جنگ سے ڈر کر واپس بھاگ کر آرہا ہے ۔ امیر عبدالرحمن کے لئے یہ خبر بہت پریشان کُن تھی۔ انہوں نے یہ خبر شہزادے کی والدہ کو بتائی تو والدہ نے اِس خبر کو سچ تسلیم کرنے سے انکار کردیا۔

امیر عبدالرحمن کو حیرانی ہوئی لیکن اُسے ایک عورت کی کم سمجھی پر محمول کرلیا ۔ تھوڑی دیر کے بعد بادشاہ کو دوبارہ اطلاع ملی کہ پہلی خبر غلط تھی جبکہ شہزادے کو اللہ تعالی نے دشمنوں پر فتح نصیب فرمائی ہے۔ بادشاہ نے گھر جا کر بیوی کو یہ خبر سنائی اور اُس سے پوچھا کہ تمہیں اتنا یقین کیسے تھا کہ شہزادہ بزدل نہیں ہے ۔شہزادے کی والدہ نے بتایا کہ جب یہ بیٹا میرے پیٹ میں تھا تو میں نے یہ تہیہ کیا تھا کہ کوئی حرام لقمہ میں اپنے منہ میں نہیں ڈالوں گی تا کہ اِس کی غذا میں کوئی حرام اثر نہ جائے اور پھر جب یہ دودھ پی رہا تھا تو میں نے دو کام کیے ۔ ایک یہ کہ کبھی میں نے اِسے بغیر وضو کے دودھ نہیں پلایا اور دوسرا یہ کہ میں نے کبھی حرام لقمہ اپنے منہ میں نہیں ڈالا۔اِس احتیاط کی وجہ یہ تھی کہ میں نہیں چاہتی تھی کہ میرا بیٹا بزدل ہوجبکہ بزدلی جیسے اثرات حرام غذا سے پیدا ہوتے ہیں ۔ اِس لئے مجھے یقین تھا کہ میرا بیٹا بزدلی کی وجہ سے میدانِ جنگ سے نہیں بھاگے گا ۔

Tags:

This is a unique website which will require a more modern browser to work! Please upgrade today!